• product
  • بیوٹی ٹپس
  • پکوان
  • خواتین کے مخصوص مسائل
  • ستارے کیا کہتے ہیں؟
  • صحت و تندرستی
  • فیشن
  • گھریلو مسا ئل اور ان کا حل
  • متفرق
  • مردوں کے مسائل
  • ہنستے مسکراتے رہیے
  • متفرق

    محنت  سے  زندگی ہے

    a

    ایک رات کا ذکر ہے کہ ایک بالٹی میں دو مینڈک گر گئے جو دودھ سے آدھی بھری ہوئی تھی ۔ دونوں مینڈک بالٹی میں ادھر ادھر چھلانگیں لگانے لگے  اور تیرنے لگے ۔ تھوڑی دیر بعد جب انہیں محسوس ہوا کہ وہ تو بالٹی میں پھنسے ہوئے ہیں اور باہر کا کوئی راستہ  نہیں تو انہوں نے وہاں سے نکلنے کی کوشش شروع کر دی ۔  لیکن بالٹی میں چونکہ دودھ تھا اس لیے اندر سے اس دی دیواریں بہت چکنی تھیں جس کی وجہ سے پھسلن بہت زیادہ تھی۔ بالٹی میں ایسی کوئی جگہ نہیں تھی جس  پر وہ اپنے ناخن پنسا کر باہر نکلنے کی کوشش کرتے۔

    جب کافی دیر تک کوشش کرنے کے بعد بھی باہر کا کوئی راستہ سجھائی نہ دیا تو ایک مینڈک ہمت ہار گیا، اس نے سوچا کہ اب مزید محنت کرنا بیکار ہے اور اب موت یقینی ہے۔ چونکہ تھکا  ہوا بہت تھا، مزید تیرنے کی ہمت نہ تھی اس لیے بالٹی میں ڈوب گیا اور مر گیا۔

    لیکن دوسرا مینڈک  پر امید تھا۔ اس نے حوصلہ نہیں ہارا اور مسلسل محنت جاری رکھی۔ اسے امید تھی کہ یہاں سے نجات کا کوئی نہ کوئی راستہ ضرور نکل آئے گا، اسی امید پر اس نے ہمت نہ ہاری اور مسلسل کوشش کرتا رہا۔ وہ بالٹی میں مسلسل تیرتا رہا اور باہر نکلنے کی تدبیر کرتا رہا۔

    بالٹی میں چونکہ دودھ تھا اور دودھ بھی ملائی سے بھرپور تھا ۔ جب کافی وقت گزر گیا  اور مینڈک اس میں مسلسل حرکت کرتا رہا تو دودھ گاڑھا ہو کر دہی کی طرح بن گیا۔ جب مینڈ ک مزید تھوڑی دیر اپنی مشق جاری رکھی تو دودھ مزید گاڑھا ہو گیا اور مکھن کے پیڑے کی مانند ہو گیا۔مکھن چونکہ اوپر تیرتا ہے لہذا  اب مینڈک اس مکھن کے پیڑے پر بیٹھ کر سستا سکتا تھا۔ اس نے وہاں بیٹھ کر کچھ دیر اپنی سانس بحال کی اور پھر ایک ہی چھلانگ میں بالٹی سے باہر جا گرا اور ایک نئی زندگی پا لی۔

    اگر یہ مینڈک بھی پہلے مینڈک کی طرح ہمت ہار جاتا تو اس کی موت بھی یقینی تھی۔ لیکن اس کی مسلسل محنت اور لگن نے اسے نئی زندگی عطا کی۔

    آردر

    b

    c

     

    About the author

    Tehreem Fatima

    Add Comment

    Click here to post a comment

    Your email address will not be published.